عضو تناسل کی لمبائی| penis enlargement

عضو تناسل کی لمبائی penis enlargement

 

عضو تناسل کی لمبائی penis enlargement

نیٹ کے عطائیوں نے بھی معصوم لوگوں کو لوٹنے کے لیے مختلف اشکال کی صورت میں ہربل سسٹمز آف میڈیسن کو بدنام کرتے ہوئے گولیاں، کیپسول یا طلا اس اشتہار کے ساتھ بیچے جا رہے ہیں کہ عضو مخصوصہ کے سائز دوگنا کرے
فقیر کو دوبئی سے چند سکرین شاٹ بھیجے گئے جس میں بڑا دعویٰ کیا گیا تھا کہ 4 انچ تک تناؤ ان کی ادویات سے ہو گا
اسی طرح ایک طبیب کے طلا سے 4 انچ سے بھی زیادہ ممکن ہے
سوال
کیا یہ ممکن ہے اور اگر ہے تو تفصیلات تجربہ و تحقیقات پر مبنی بتائیں؟
دوستوں کیا کہو ان کو فقط اللہ ہی حافظ ہے ان جیسے جاہلوں کا جو طب جیسے پاکیزہ اور معتبر کام کو چند پیسوں کے بدنام کرتے ہیں
اگر 4 انچ بڑ جائے عضو تناسل یا اس سے زیادہ
تو تصور کرو ذرا اس میں تھوڑی سی بھی سچائی ہوتی تو ضرور کہیں نہ کہیں اس کی ضرور ثبوت پائے جاتے مگر آپ کو ماسوائے جھوٹے دعوے کے کچھ بھی نہیں ملے گا فقیر بڑے ہوش و حواس سے یہ بات کہتا ہے کہ بہت سے پرانی کتب طبی میں اس معاملہ میں مختلف بے شمار و قطار نسخہ جات پڑھیں اور استعمال کرائے مگر لمبے عرصے تک تجربات کے بعد بھی عضو کی لمبائی میں غیر معمولی طور پر لمبائی کا اضافہ نہ ہوا مگر قابل طبیب ادویات سے لاغری ختم کر کے عضوتناسل کی موٹائی میں اضافہ کر سکتا ہے الحمدللہ فقیر کی اس بات موٹائی اور لاغری والی بات کی تصدیق ہر وہ بندہ کرے گا جس نے وٹا ای ایکس ہربل کیپسول +سفوف مغلظ خاص (حکیم سہیل والا) مسلسل 40 دنوں تک استعمال کیا ہو
اب بات کرے جدید طب یعنی ایلوپیتھک کی تو اس کے مطابق عضوتناسل کی لمبائی میں اضافہ ناممکن ہے البتہ وہ بھی پیسے بٹورنے کے لیے ان جاہل طبیبوں سے کسی طرح بھی کم نہیں ہیں جو ایک بڑی فیس کے عوض مختلف قسم کی غیر فطری مشقیں بتاتے ہیں جن کو سن کر دیکھ کر بندہ غریب کے ویسے ہی پسینے چھوٹ جاتے ہیں
فقیر کو ایک غیرملکی مریض نے بتایا کہ ایک ڈاکٹر نے اسے ایک بڑی فیس کے عوض یہ علاج تجویز کیا کہ عضو مخصوصہ پر وزن لٹکانے کو کہا جس سے لمبائی تو دور البتہ شہوت کا ستیاناس ہو گیا بہرحال آپ لوگ انٹرنیٹ سرچ میں جا کر بعض لنکس معلوم کر سکتے ہو جو سرجری کے طریقوں پہ کام چوری چھپے کرتے ہیں جس میں پشت کے گوشت کی پیوند کاری کی جاتی ہے

یہ کسے ہوتی ہے جاننے کے لیے فقیر کی ویڈیو دیکھے

فقیر نے بعض معتبر میڈیکل ویب لنکس پر یہ بھی پڑھا ہے کہ بعض سرجن ضرورت پڑھنے پر زیر ناف کی جلد سے کوئی ٹکڑا پلاسٹک سرجری کے ذریعے جوڑ دیتے ہیں
جس سے دو طرح کی تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں
عضو کا ابتدائی حصہ تقریباً دو سینٹی میڑ بالوں کی آماجگاہ بن جاتا ہے جیسے ڈاکٹرز الیکڑولائٹس کے ذریعے دور کرتے ہیں
ایستادگی یعنی ایریکشن کے وقت عضو پینتالیس تا ساٹھ درجہ گھڑا ہوتا ہے لیکن ڈاکٹرز کا دعویٰ ہے کہ اس سے جماع کرنے میں کوئی دشواری کا سامنا نہیں ہوتا ہے اللہ ہی بہتر جانتا ہے ان سب باتوں کے بعد فقیر فقط یہی کہے گا عضو کی طوالت کی خاطر اتنی تکالیف کاٹنے کے بعد بھی ماسوائے نقصان کے کچھ حاصل نہ ہو گا
کوئی صاحب علم یا اہل فن سوال کرے کیوں یا کیسا؟
پہلی بات عضو کا استحکام ختم ہوا
دوم عضو کے فریکچر ہونے کا امکان
سوم عضو میں ہڈی نہ ہونے کے باوصف ایریکشن کے وقت عضو کا لکڑی کی طرح سخت ہونا یا اگر صنف مخالف کے پیڑو کی ہڈی سے ٹکرا کر پانی سے آخری حد تک بھرے ہوئے پائپ کی طرح عضو کے بندھن کی پٹیاں ٹوٹ جائے تو پھر اس کا علاج بھی جراحی سی ہی ممکن ہے
جسمانی اور روحانی طور پر صحت مند ہونا اللہ پاک کا عظیم تحفہ ہے تو روحانیت (ذکر اللہ) سے دل خوش اور سرور سے بھرپور ہوتا ہے جبکہ صحت سے جسمانی افعال بآسانی ادا ہوتے ہیں فقیر کی انسانی صحت کو بہتر بنانے کی کوشش کس قدرفائدہ مند ہے اس کے لیے آپ کے مشوروں کا منتظر رہوں گا یعنی آپ آزادنہ طور پر ہماری پرووائیڈ لنکس پر اپنی بہتر رائے کا اظہار کر سکتے ہو
نوٹ
جو مریض تیار نہیں کر سکتا یا دوا تیار کرنے میں کس قسم کا مشورہ چاہیے تو پوسٹ پر کمنٹ کر کے پوچھ سکتا ہے انشاءاللہ ہم رہنمائی کرے گے
یا تیار شدہ دوا آرڈر کرنے کے لیے فون نمبر اینڈ واٹس ایپ لنک پر کلک کریں

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *