کانجی/ آبکامہ/ Kanji

kanji drink / کانجی / آبکامہ
کانجی ڈرنک ایک مصنوعی ترش سیال ہے. وہ ترش سیال جو آرد کو پودینے کے ساتھ گوند کر . . . بترکیب خاص تیار کیا جاتا ہے
کانجی بنانے کا طریقہ
جو کا آٹا  کلو
پودینہ جنگلی سوگرام
نمک عام پچاس گرام
اجوائن پچاس گرام
کانجی بنانے کا طریقہ
اجوائن اور پودینہ پیس کر سب ملا لیں اور پانی سے گوند کر روٹی بنا لیں اور تنور مین پکا لیں پھر اسکے باریک ٹکڑے کر کے وزن کر لیں اور چار گنا پانی ڈال کر بیس روز دھوپ میں رکھ دیں یہان تک کہ اس میں خمیر اٹھ جاۓ اور اس میں پانی سرکہ کی مانند ترش ھو جائے تب اس پانی کو نتار کر کسی شیشہ کی بوتل میں محفوظ کر لیں اسکا رنگ بھورا سا ھوتا ھے بوتیز اور ترشی مائل اور ذائقہ بھی ترش ھی ھوتا ھے
فوائد / kanji ka faida
کانجی بلغمی رطوبات کو روکتی ھے
بلغم کوچھانٹ کر باھر بھی نکالتی ھے
بلغم کی پیدائش بھی اس کے استعمال سے بند ھو جاتی ھے
مقوی معدہ سمجھاجاتا ھے
دست وقے روک دیتی ھے
کانجی رطوبات کوخشک کرکے بھوک بڑھادیتی ھے
غذا کو فورا ھضم بھی کر دیتی ھے
چند روز میں کمی خون دور کر کے چہرہ سرخ بناتی ھے

سیب کے فائدے/ سیب / apple

کانجی موسمِ بہار میں ہمارا روایتی مشروب ہے ۔ رنگ برنگے بازاری مشروبات اور کولا ڈرنکس نے کانجی کی اہمیت کم کر دی ہے ورنہ برصغیر میں برسوں سے رائج دیسی مشروبات لذت کے ساتھ ساتھ جگر کے افعال کو بھی درست کرتے ہیں ۔۔ ان دیسی مشروبات کی ورائٹی اتنی زیادہ ہے کہ شمار مشکل ہے ۔ دو تین عشرے پہلے ٹھیلے پر لال بڑے بڑے مٹکوں میں کانجی بیچنے والوں کے ٹھیلے گلی محلوں میں پھرتے تھے ۔۔ شوقین حضرات کی فرمائش پر کالی گاجر کے نرم قتلے بھی مٹکے میں سے نکال کر پیش کیئے جاتے ۔ جبکہ محتاط اور کفایت پسند گھرانے یہ مشروب خود تیار کرتے تھے ۔۔ کانجی معدے کو متحرک کرنے کے علاوہ جگر کی گرمی کو بھگاتی ہے ۔۔ آ ج کل بازار میں کالی گاجریں ستّر اسّی روپے کلو کے حساب سے دستیاب ہیں کانجی بنا کر پیئں ، جگر کی بیماریوں سے دور رہنے کے علاوہ گھر والوں کو ایک نئے ذائقے سے روشناس کروائیے
کانجی کی پانی
اشیاء
1- کالی تازہ گاجر ۔۔۔۔ دو کلو
2- کالا نمک ۔۔۔۔ تین چائے کے چمچ
3- سفید نمک ۔۔۔۔ایک بڑا چمچ
4 ۔۔۔ پسی ہوئی رائی ۔۔۔۔ تین چائے کے چمچ
5 ۔۔۔۔ پسی لال مرچ ۔۔۔۔ دو سے تین چائے کے چمچ
6 ۔۔۔۔اجوائن ۔۔۔۔۔ ایک چائے کا چمچ ثابت
7 ۔۔۔۔ پانی ۔۔۔۔۔ چار سے پانچ لیٹر
ترکیب ۔۔
گاجریں دھو کر چھیل لیں اور کپڑے سے پونچھ کر لمبائی کے رخ پر کاٹ لیجئے ۔ گول قتلے بھی کاٹے جا سکتے ہیں
صاف شیشے کا جار یا مٹی کا مٹکا لے کر اس میں چار سے پانچ لیٹر پانی ڈال دیجئے
گاجریں رائی ۔۔ سفید نمک ۔۔ کالا نمک ۔۔ لال مرچیں اور اجوائن ملا کر پانی میں ڈال دیجئے اور پھر شیشے کے جار یا مٹکے میں ڈال کر اس کے منہ پر موٹی ململ کا کپڑا باندھ دیجئے ۔۔۔

تین چار دن کے لئے دھوپ میں رکھیں
روزانہ دو سے تین مرتبہ ہلاتے رہیں ۔ گاجریں رنگ چھوڑتی جائیں گی اور جوہر پانی میں شامل ہوتا جائے گا ۔ تیسرے چوتھے دن ذائقہ چکھ لیجئے ۔ خوش ذائقہ کانجی تیار ہوچکی ہوگی ۔ اسے بوتلوں میں بھر کر فریج میں رکھ لیجئے ۔ ایک اہم بات یہ کہ اگر ایک جگ کانجی مٹکے میں سے نکالی ہے تو ایک جگ سادہ پانی اور ڈال دیجئے کل تک وہ بھی مکمل تیار ہو گی ان شاءاللہ
الحمد للہ جو باتیں علمی اعتبار سے اور اکابر حکماء اکرام کے تجربات سے مفید ثابت ہوتی ہیں مخلوق خدا کی بھلائی کے لیئے پوسٹ کر دی جاتی ہیں لہذا ﺁﭖ بھی اچھی بات شئیر کر کے صدقہ جاریہ میں حصہ لیں ہو سکتا ہے کہ کوئی ضرورت مند فائدہ اٹھائیں
ﻣﺰﯾﺪ ﺩﻟﭽﺴﭗ طبی معلومات , ﺩﯾﺴﯽ ﻧﺴﺨﮧ ﺟﺎﺕ، ﺟﺴﻤﺎﻧﯽ و روحانی ﺑﯿﻤﺎﺭﯾﺎﮞ کے علاوہ جنسی زنانہ و مردانہ، ﻋﻼﺝ , ﺟﮍﯼ ﺑﻮﭨﯿﻮﮞ ﮐﮯ ﻓﻮﺍﺋﺪ , ﺑﮩﺘﺮﯾﻦ ﺗﺤﺮﯾﺮﻭﮞ ﺍﻭﺭﺳﺒﻖ ﺍٓ ﻣﻮﺯ تجربات ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮨﻤﺎﺭﺍ ویب سائٹ کو سبسکرائب ﮐﯿﺠﺌﮯ. اور ﺍﭘﻨﮯ ﺩﻭﺳﺘﻮﮞ ﮐﻮ ﺑﮭﯽ ﺷﯿﺌﺮ ﮐﺮﯾﮟ … ﺷﮑﺮﯾﮧ
حکیم محمد اعظم سہیل نقشبندی
(ماہر امراض معدہ و جنسی امراض)
فون نمبر اینڈ واٹس ایپ03456752811

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *