dalchini benefits /دار چینی کے فوائد / dar chini in urdu

dalchini benefits /دار چینی کے فوائد / dar chini in urdu

دارچینی قُوتِ مدافعت بڑھانے اور وزن گھٹانے میں معاون ہے دارچینی درختوں کی چھال کے اندرونی حصے سے تیار کی جاتی ہے جس کو سائنسی طور پر سینمن کہا جاتا ہے۔ یہ ایک مزیدار اور خوشبودار مصالحہ ہے جو کئی ہزار سال سے مشہور چلا آ رہا ہے۔

دارچینی صحت اور خوبصورتی کے لیے متعدد فوائد رکھتی ہے لوگ قدیم زمانے سے اس کے فوائد پر یقین رکھتے ہوئے استعمال کرتے آ رہے ہیں۔
دارچینی کو تاریخ میں ہمیشہ مصالحے کے طور پر استعمال کیا جاتا رہا ہے۔ دارچینی کا تعلق مصر کی قدیم تاریخ سے ہے۔

زمانہ قدیم میں یہ ایک ’نایاب اور قیمتی‘ تحفہ ہوتا تھا جو بادشاہوں کو پیش کیا جاتا تھا۔ پھر دارچینی آہستہ آہستہ مختلف شکلوں میں لوگوں تک پہنچنا شروع ہوئی۔ جس میں اس کا گرم مشروب بھی شامل تھا، اسے کئی ترکیبوں کے ساتھ کھانے میں اب بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ ان کھانوں میں سب سے مشہور کبسہ چاول ڈش ہے جو آسانی سے بازاروں میں دستیاب ہے۔

سائنسی تحقیق نے ایسی روایات کی تصدیق کی ہے جو لوگ برسوں سے دارچینی کے فوائد کے بارے میں کہتے چلے آ رہے تھے۔ ذیل میں کچھ ایسے فوائد ذکر کرتے ہیں جن کی سائنس بھی تائید کرتی ہے۔

dalchini benefits /دار چینی کے فوائد
دارچینی میں موجود اینٹی آکسیڈینٹس جسم میں سوزش کے خلاف کام کرتے ہیں۔ اس سے مختلف بیماریوں کا خطرہ کم ہوتا ہے اور قوت مدافعت بھی بہتر ہوتی ہے۔
دار چینی سے دل کی صحت
دارچینی کے فوائد میں سے یہ بھی ہے کہ اس سے دل کے امراض کا خطرہ کم ہو جاتا ہے۔ تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ دارچینی کا روزانہ ایک گرام یا آدھا چائے کا چمچ روزانہ لینے سے کولیسٹرول کی سطح کم ہوتی ہے۔ جبکہ مفید بہتر کولیسٹر ایچ ڈی ایل باقی رہتی ہے۔
دارچینی سے ذیابیطس سے لڑنا
دار چینی بلڈ شوگر کی سطح کو کم کرتی ہے اور انسداد ذیابیطس کا مضبوط اثر رکھتی ہے۔ کھانے کے بعد خون میں داخل ہونے والے گلوکوز کی مقدار کو دار چینی کم کردیتی ہے
دارچینی سے الزائمر کی بیماری سے بچاتی ہے
دماغی خلیوں کے فنکشن کے بتدریج ضائع ہونے سے نیوروڈیجینریٹی بیماریاں پیدا ہوتی ہے الزائمر کی بیماری ایک عام قسم ہے ، لیکن دار چینی دماغی بیماریوں سے لڑنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔
دارچینی سے کینسر کی روک تھام
تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ دارچینی کے فوائد میں سے ایک یہ ہے کہ یہ کینسر کی روک تھام اور علاج میں استعمال ہوتا ہے، کینسر کے خلیوں کی نشوونما کو محدود کرتے ہوئے اور ٹیومروں میں خون کی وریدوں کی تشکیل دیتی ہے خاص طور پر بڑی آنت کے کینسر سے بچاتی ہے۔
دارچینی سے بیکٹیریل اور کوکیی انفیکشن کا مقابلہ کرنا
دار چینی کے اہم فعال اجزا میں سے ایک سنمالڈہائڈ مختلف قسم کے انفیکشن سے لڑنے، اور سانس کے انفیکشن کا علاج کرنے میں مدد کرتا ہے۔
دار چینی سے دانتوں اور منہ کی حفاظت
دار چینی کے جمالیاتی فوائد میں سے ایک یہ ہے کہ یہ دانتوں کی خرابی کو روکتا ہے اور سانس کی بدبو کو دور کرتا ہے۔
دارچینی سے وائرس کا مقابلہ
یہ ثابت ہوا ہے کہ دار چینیHIV سے لڑتا ہے، جس کا خاتمہ ایڈز کے ساتھ ہوسکتا ہے۔
دارچینی سے خون کی گردش کو بہتر بنانا
دار چینی کے اندر تیل سرخ خون کے خلیوں کے ناپسندیدہ ’کلامپنگ‘ کو روکتا ہے۔
دار چینی سے وزن میں کمی کرنا
دارچینی سے وزن کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے جس کی وجہ سے جسم میں چربی زیادہ ہوتی ہے، خاص طور پر پیٹ کی چربی زیادہ ہوتی ہے۔
دار چینی سے سوزش ختم کرنا
انسداد سوزش کی خصوصیات کی وجہ سے دار چینی جوڑوں کے درد، پٹھوں اور جوڑوں کو دور کرنے میں مدد کرتی ہے۔
دراچینی سے نظام انہضام کو بہتر بناتا ہے
دار چینی آنتوں سے ناپسندیدہ گیسوں کو نکالنے میں مدد کرتی ہے، کیونکہ اس سے تیزابیت، اسہال اور متلی کی بیماری سے نجات ملتی ہے۔
دار چینی سے کم بلڈ شوگر کا علاج
دار چینی کھانے سے بلڈ شوگر کو کم کرنے میں مدد ملتی ہے، بہت زیادہ دار چینی کھانے سے اس میں ڈرامائی کمی واقع ہوسکتی ہے، خاص طور پر اگر آپ ذیابیطس کی دوائی لے رہے ہیں۔ ذیابیطس کے مریض اسے احتیاط سے کھائیں کیونکہ دار چینی ذیابیطس کی دوائیوں کے اثر کو بڑھاتا ہے۔

* دار چینی سے سانس لینے میں دشواری ہونا کا علاج
ایک وقت میں بہت ساری دار چینی کھانے سے سانس لینے میں دشواری پیدا ہوسکتی ہے کیونکہ اس مسالے کی نرم ساخت ہوتی ہے، اور اس سے سانس لینا آسان ہوتا ہے اور اتفاق سے سانس لینے میں دمہ کا شکار افراد کے لیے سانس لینے میں پریشانی پیدا ہوجاتی ہے۔ اسی طرح دیگر وجوہات کی وجہ سے بھی سانس میں تکلیف ہوسکتی ہے، لہذا محتاط رہیں۔
دارچینی کو ادویات کے ساتھ ملانا
دار چینی دوائیوں کے ساتھ تھوڑی یا معتدل مقدار میں استعمال کرنا محفوظ ہے۔ تاہم اگر آپ ذیابیطس، دل کی بیماری، یا جگر کی بیماری کی دوائیں لے رہے ہیں تو دارچینی کا زیادہ استعمال کرنا ایک مسئلہ ہوسکتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ دار چینی ان دوائیوں کے ساتھ مل جاتی ہے اور ان کے اثرات کی شدت میں اضافہ کرتی ہے۔
دار چینی کتنی مقدار میں کھانی چاہیے؟
دار چینی عام طور پر کھانے کے لیے ایک مصالحے کے طور پر تھوڑی مقدار میں استعمال کرنا محفوظ ہے، اس سے صحت کے بہت سے فوائد ہیں۔ دار چینی کے بہت سے فوائد کے باوجود اسے زیادہ استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ لہذا یہ مشورہ دیا جاتا ہے کہ بالغوں کے لیے روزانہ دار چینی کا ایک چائے کا چمچ کافی ہے.
دار چینی کا استعمال
غذا میں دار چینی کو کس طرح شامل کریں ؟
دار چینی کو ابال کر تھوڑا سا شہد یا دہی میں ڈال کر گرم اور صحت مند مشروب بن سکتا ہے۔
بھیڑ کے بھنے ہوئے گوشت میں بینگن اور کشمش کے ساتھ دارچینی استعمال کی جا سکتی ہے۔
کیک اور میٹھے میں دارچینی شامل کی جا سکتی ہے، اس میں شامل چینی کی مقدار کو مدنظر رکھیے۔ سالن میں دارچینی ڈال دیں۔ دار چینی کو کباب اور کوفتہ میں بھی شامل کیا جا سکتا ہے۔
دار چینی کے ضرورت سے زیادہ استعمال کرنے کے مضر اثرات
دارچینی کے بہت سے فوائد کے باوجود دار چینی کے زیادہ استعمال سے مضر اثرات بھی برآمد ہوتے ہیں، جو یہ ہیں۔
جگر کو پہنچنے والے نقصان
دار چینی میں کومارین کی ایک بڑی مقدار ہوتی ہے، متعدد مطالعات سے معلوم ہوا ہے کہ زیادہ کومارین کا استعمال جگر میں زہر پیدا کرتا اور نقصان کا سبب بن سکتا ہے۔
کینسر کے خطرے کو بڑھاتا ہے
مطالعے سے پتہ چلتا ہے کہ دار چینی میں دستیاب بہت زیادہ کومارین کھانے سے کچھ قسم کے کینسر کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *