asthma / ضیق النفس / دمہ الرجی / سانس پھولنے

asthma / ضیق النفس / دمہ الرجی / سانس پھولنے
ضیق النفس کی پہچان
سانس کی لطیف نلیوں میں فضلات کے بھر جانے سے سانس لینے میں مشکل ہو اور کھانسی ہونے کو دمہ یا ضیق النفس کہتے ہے
ضیق النفس کی ابتداء کھانسی سرسراہٹ و سانس اکھڑنے کے دورے کی شکل میں ہوتی ہے دمہ کا دورہ اکثر رات کو زیادہ ہوتا ہے بلخم سخت بدبودار اور ڈوری جیسا نکلتا ہے

ضیق النفس کی اقسام
ضیق النفس کی دو اقسام ہیں
Bronchial Asthma پھیپھڑوں سےتعلق رکھنےوالا ضیق النفس
Cardiac Asthma دل سےتعلق رکھنے والا ضیق النفس

پھیپھڑوں سےتعلق رکھنےوالا ضیق النفس
اس میں سانس کی نلیاں سکڑ جاتی ہیں اور سانس مشکل سے آتا ہے
دل سےتعلق رکھنے والا ضیق النفس
دل کی کمزوری کی وجہ سے دوران خون میں فرق آتا ہے اور آکسیجن کم مقدار میں ملتی ہیں سانس کھینچنے سےمریض کا چہرہ لال ہو جاتا ہے یہ مرض زیادہ تر مردوں میں ہوتا ہے
دمہ کی علامات یا وجوہات
سانس کی نلی میں دواؤں سے کسی بھی طریقہ ہائے علاج سے خشک کیا گیا بلخم خاص وجہ ہے جو اکثر دمہ کے مریضوں میں دیکھتا ہو ، سینہ و پھیھپڑے کا امتلاء، نزلہ و زکام، کھانسی، خرابی معدہ و قبض بعض افراد کو گھاس تمباکو سے، بچوں کا دمہ اکثر ان کے سونے کے کمرہ میں بلی کتا بھیڑ بکری مطلب پالتو یا خانگی جانوروں کی موجودگی اس کا سبب بن جاتی ہے، جبکہ روسی ڈاکڑ ضیق النفس کو جرثومی مرض تسلیم کرتے ہیں ان کا کہنا ہے ۹۸ فیصد مریضوں کو مرض سے پہلے مختلف امراض کے جرثومہ کا شکار ھونا پڑتا ہے
احیتاطی تدابیر
ورم گردہ کے مریضوں کو بھی سانس کی بےقاعدگی کا عارضہ ہو جاتا ہے یہ دمہ سےمختلف ہوتا ہے اور دمہ کی ادویات سے فائدہ نہیں ہوتا ہے
ضیق النفس دمہ الرجی کا علاج
ضیق النفس مرض کا اصولی علاج یہ ہے دورہ مرض کو گھٹائیں اور وقفہ کی حالت میں اصل سبب مرض کودور کریں
دمہ، سانس پھولنے کا علاج
ڈاکڑی ادویات میں ایفی ڈرین ھائیڈروکلور آدھی گرین سے دورہ رک جاتا ہے
لیکن اس کو بہت احتیاط سے استعمال کرنی چاہیے کیونکہ اس سےغدہ قدامیہ بڑھ جاتے ہیں اور پیشاب بند ہو جاتا ہے جبکہ اس کی بجائے اگر سوم کلپا کا سفوف جس سے ایفی ڈرین ھائیڈروکلور بنتی ھے ۱۰گرین کا قہوہ پلاؤ تو دورہ فورا رک جاتا ہے اور نقصانات کا خدشہ بھی نھیں رھتا اس کےعلاوہ بھی مارکیٹ میں بےشمار ادویات موجود ھے سچ تو یہ ہے آج تک ہم نےکسی بھی ضیق النفس کے مریض کو مکمل شفا پاتے نہ دیکھا ایلوپیتھک میڈیسن سے
دمہ الرجی کا قدرتی علاج
ایک جھینگر کی چائے پیا کرے
سانس کی ورزش کریں
سرسوں کا تیل چھاتی پرخوب مالش کریں
سر کےتین تکیےرکھ کر سونےکی عادت ڈالیں
اگر خاص پیشہ یا خاص غذا مرض کا سبب ھں تو ترک کریں
غرض کہ اس مرض کا مکمل علاج ماسوا چند مخصوص لوگوں کےکوئی دوسرا نہیں کر سکتا میر ی یہ بات شاید کچھ معالج حضرات کو بری لگے پر سچ یہی ہے گاؤں سکرلیا سے ایک چوہدری ریاض صاحب تشریف لائے جو آجکل نورکوٹ میں رھائش پذیر ہیں اور مرض دمہ میں مبتلا ہو گیا جوانی سےلیکر اب تک علاج معالجہ کراتا رہا بڑے بڑے ہسپتالوں میں داخل رہا پھر بھی افاقہ نہ ہوا بقول اس چوہدری صاحب کے ایک دن کی فیس پچیس ہزار جبکہ بعض دس ہزار پر ڈے (روزانہ) کے حساب سے بطور میڈیکل فیس ادا کیے یہ باتیں اس نے مجھےمسجد میں بیٹھ کر بتائی پھر ہیومیو و دیسی علاج کئی سال جاری رکھے بالا آخر مرض کا زور بڑھتا گیا اور چوہدری صاحب اپنا کاروبار چھوڑ کر اپنےگھر بیٹھ گئے اور تین سال کے بعد مرض نےاتنا زور کیا کہ بستر پر پڑھ گئے اور تین ماہ بستر پر رہے اتفاقیہ ملاقات ہوئی میں نے دواخانہ پر آنے کو بولا تو فقیر کے پاس تشریف لائے میں یہ ادویات دی
ہمارے دواخانہ کا سفوف استھمینا اور کف کیپسول جو فقیر نے ایک طبی بیاض میں بھی اس کا نسخہ پڑھا ہے مگر مجھے ایک حکیم صاحب نے بطور تحفہ بتایا تھا
جس کا نسخہ نقل کر رہا ہو تاکہ لوگ مستفید ہو
اجزاء
رسونت 20 گرام
سہاگہ سفید 20 گرام
نوشادر 20 گرام
قلمی شورہ 20 گرام
طریقہ تیاری
مکئی کے تکے لیں اور ادویات کو تکے پر لگائے اور کسی مٹی کے برتن میں ڈھانپ کر 10 کلو اوپلوں کی آگ دیں
بس ٹھنڈا ہونے پر ادویات کو کپڑ چھان کر لیں
مقدار خوراک
ایک تا دو رتی ہمراہ پانی یا ملائی
نوٹ
ہمارے ایک بہت ہی بوڑھے طبیب حکیم مشتاق صاحب کو فقیر نے یہ طریقہ بتایا تو وہ اس دوا کو اپنے مطب میں ہمیشہ رکھتے ہیں اور مجھے بتایا کہ ملٹھی دو تولہ کے اضافے سے فوائد دو چند ہو جاتے ہیں
فقیر کو اچھی طرح یاد ہے کہ ایک صوبیدار غفور گھٹنے کی درد اور سانس کی مرض میں مبتلا تھا اور حج یا عمرہ کے لیے گیا تو فقیر سے کچھ ادویات کے لیے کہا
تو میں نے یہی دوا تھی جس سے اس دونوں کیفیات درست ہو گئی
بہرحال شربت بنفشہ و لعوق سپستان اور کف کیپسول اور سفوف استھمینا ہمارے دواخانہ کا استعمال کرا کے کئی دفعہ حیران کن اور لاعلاج مریضوں کو مکمل صحت یاب ہوتے دیکھا ہے
بقول چوہدری ریاض کے یہ ادویات استعمال کرنے کے بعد وہ اپنے گھر سے پیدل دواخانہ پر آنے لگا کچھ عرصے بعد خوب پیٹ بھر کر کھانے لگا
پھر دو ہفتے بعد 2 کلو میڑ پیدل سیر کی اور تین ہفتے بعد میرے پاس مزار شریف پیدل آیا اور خانقاہ پر اس نے ہمارے خادم کے لیےکپڑے اور اعلی قسم کا کھانا لیکر ہمارے پاس آیا تو اللہ کی رحمت خوب برسی ہم نے اسے اچار دودھ چاول سب کچھ کھلایا ان چیزوں سے اس نے شفا پائی اس کا پورا خاندان اولیا اللہ کا منکر تھا جب اس نے کرامت میر ے مرشد کریم کی دیکھی تو میرے ساتھ میرے مرشد کے آستانے پر گیا تو اتنا پختہ یقین کر لیا میں دوا نہیں کھاؤ گا الحمدللہ اب کئی سال گزر گئے ہیں وہ تندرست ہے اور اب صوم و صلوتہ کا پابند ہے اللہ اس کی حفاطت کرئے اور استقامت دے اور ہم سب کا خاتمہ ایمان پر ہو دوستوں فقراء کی معمولی خدمت کا صلہ اللہ نے کیسا عطا کیا ایمان بھی دیا اور شفابھی دی
دمہ قلبی کا علاج
دمہ قلبی میں خمیرہ گاؤزبان عنبری جواہر والا استعمال کرائیں اور مریض کا سانس درست ہونے تک اکیلا نہ چھوڑے
غذا و پرہیز
ہلکی اور زود ہضم غذائیں بکری کا شوربہ یخنی مونگ آش جو کدو وغیرہ گرم نفاخ اورثقیل اشیاء تیل لال مرچ ٹھنڈا پانی دہی لسی وغیرہ سےپرہیزکریں
فقیر حکیم محمد اعظم سہیل
Call & WhatsApp.03456752811

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *