anar fruit Pomegranate

انار (Pomegranate)

اللہ تعالیٰ کا ارشاد پاک ہے
وَهُوَ الَّذِيْۤ اَنْشَاَ جَنّٰتٍ مَّعْرُوْشٰتٍ وَّغَيْرَ مَعْرُوْشٰتٍ وَّالنَّخْلَ وَالزَّرْعَ مُخْتَلِفًا اُكُلُهٗ وَالزَّيْتُوْنَ وَالرُّمَّانَ مُتَشَابِهًا وَّغَيْرَ مُتَشَابِهٍ ۗ كُلُوْا مِنْ ثَمَرِهٖۤ اِذَاۤ اَثْمَرَ وَاٰتُوْا حَقَّهٗ يَوْمَ حَصَادِهٖ ۖ وَلَا تُسْرِفُوْا ۗ اِنَّهٗ لَا يُحِبُّ الْمُسْرِفِيْنَ
“وہ اللہ ہی ہے جس نے طرح طرح کے باغ اور تاکستان اور نخلستان پیدا کیے، کھیتیاں اگائیں جن سے قسم قسم کے ماکولات حاصل ہوتے ہیں، زیتون اور انار کے درخت پیدا کیے جن کے پھل صورت میں مشابہ اور مزے میں مختلف ہوتے ہیں کھاؤ ان کی پیداوار جب کہ یہ پھلیں، اور اللہ کا حق ادا کرو جب اس کی فصل کاٹو، اور حد سے نہ گزرو کہ اللہ حد سے گزرنے والوں کو پسند نہیں کرتا”
قرآن پاک میں انار کا ذکر رمان تین مرتبہ ہے اور نباتاتی سائنس نام Punica Granatum ہے مشہور سائنسدان ڈی کینڈو نے انار کا وطن ایران بتایا ہے اس کے علاوہ جنگلی انار افغانستان، شام اور شمالی ہندوستان یعنی ہمالیہ میں پایا جاتا ہے سب سے اعلی و مشہور انار فلسطین، شام اور لبنان علاقوں کا ہے اور اسی وجہ اس علاقے کے ایک مشہور شہر ربان کا نام اس پھل سے منسوب ہے
بہرحال بات کرے پاکستان میں موجود انار کی اقسام میں فقیر کے تجربے کے مطابق ہندوستان کا پونا اور شولاپور کا انار فوائد میں سب سے اعلیٰ ہے اس علاقہ کی ایک دلچسپ رسم بھی ہے کہ شادی کے بعد فوراً دلھن سے پکے ہوئے انار کو فرش پر پٹخنے کو کہا جاتا ہے اور انار کے پھٹنے سے جتنے دانے زمین پر بکھر جائے اتنی اولادیں اس جوڑے سے ہونے کی پیشین گوئی کی جاتی ہے فقیر کہتا ہے کہ یہ ایک رسم ہے حقیقت سے اس کا دور تک بھی تعلق نہیں ہے
انار ایک حیرت انگیز اور نایاب پودہ ہونے کے ساتھ پھل سمیت اس کے ہر حصہ طبی فوائد سے بھرا ہوا ہے
اس کا پھل غذائیت سے بھرپور ہے جس کی وجہ بعض معالج انار کے دانوں کو طبی غذا یا طبی ثمر کہتے ہیں
انار میں بڑی مقدار میں شکر یعنی گلوکوز، فرکٹوز کے علاوہ حیاتین موجود ہیں
حیاتین میں خاص طور پر Thiamine اور Riboflavin اس کے علاوہ وٹامن سی (اس کو ایلوپیتھک طب میں Ascorbic Acid کہتے ہیں) میں بہت اچھی مقدار پائی جاتی ہے
فاسفورس، سوڈیم، کیلشیم، سلفر کے علاوہ Oxalic Acid اور Carotene کا انار ایک اچھا ذریعہ ہے
طبی فوائد
اب بات کرے فوائد کی تو فقیر کوئی تکے نہیں لگایا گا اور جو باتیں بھی بتاؤ گا اگر اسی طر ح عمل کرو گے تو انشاءاللہ ان امراض میں فائدہ ظاہر ہو گا
پہلا
انار دانوں کا رس ہلکی اور فرحت انگیز غذا ہے جو دل کے امراض میں بہت سودمند ہے بالخصوص جب معدہ کے امراض ساتھ ہو کیونکہ میٹھا انار قبض کشا ہے اور جو تھوڑا کھٹاس والا ہو وہ معدہ کے ورم (سوجن) اور دل کے درد کے لیے لاجواب دوا اور ٹانک ہے
دوسرا
انار کا شربت بدہضمی ( Dyspepsia)جیسے معدہ کے روگوں کو دور کرنے کی اہلیت رکھتا ہے اس کے علاوہ خونی پیچس یا اسہال میں 50 گرام انار کے رس بہترین علاج ثابت ہو گا
تیسرا
قلت خون (Anaemia) یرقان (Jaundice) واضح کرتا چلوں کہ ہیپاٹائٹس الگ مرض ہے اور یرقان الگ اس لیے دوران علاج تشخیص ضروری ہے، بلڈ پریشر، بواسیر(Piles) ہڈیوں اور جوڑوں کی درد میں انار کے رس میں شہد ملا کر پینا سے فائدہ ہو گا انشاءاللہ
چوتھا طریقہ علاج و انار کی جڑ کی چھال
انار کی جڑ میں بیس فیصد سے زیادہ Tannin موجود ہوتا ہے جبکہ چمڑے کی Tanning انار کے چھلکوں سے کی جاتی ہے کیونکہ انار کی جڑ امراض میں زیادہ موثر ہے بمقابلہ انار کے چھلکوں کے
انار کی جڑ کا چھال پانی میں ابال کر پینے سے پیٹ کے کیڑے سمیت (Tapeworm) بھی ختم ہو جاتے ہیں
ابلا ہوا انار کا پانی ٹی بی اور پرانے بخار کو بھی ختم کرے گا انشاءاللہ اور ملیریا کے بعد والی کمزوری بھی رفع کرے گا
انار کی جڑ کی چھال کا ابلا ہوا پانی نسوانی شکایت کی دھلائی کے لیے موثر ہے
انار کا پھول
انار کا پھول اسقاط حمل کی دوا ہے
ایک پیخمبرانہ قول کے مطابق انار کھانے سے انسان میں نفرت و حسد کا مادہ زائل ہو جاتا ہے
اچھی بات پھیلانا بھی صدقہ جاریہ ہے اگر فقیر کی تحریر اچھی لگے تو پلیز شئیر کرے تاکہ دوسرے لوگ بھی فائدہ اٹھا ئے
فقیر حکیم محمد سہیل نقشبندی چشتی
(ماہر امراض معدہ و جنسی امراض)
واٹس ایپ و فون نمبر

03456752811

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *